مرد فرنگ

 
ہزار بار حکيموں نے اس کو سلجھايا
مگر يہ مسئلہ زن رہا وہيں کا وہيں
قصور زن کا نہيں ہے کچھ اس خرابي ميں
گواہ اس کي شرافت پہ ہيں مہ و پرويں
فساد کا ہے فرنگي معاشرت ميں ظہور
کہ مرد سادہ ہے بيچارہ زن شناس نہيں